صدرڈی ایچ اے راولپنڈی سعید خان نےایمپائروقاص بٹ،والد جمیل بٹ،بھائی وقار بٹ سمیت کامران کامی پرعائد پابندی ختم کردی

راولپنڈی:03مارچ(پلیئرزڈاٹ پی کے/ ضیاءبخاری) صدرڈی ایچ اے راولپنڈی سعید خان نےایمپائروقاص بٹ،والد جمیل بٹ،بھائی وقار بٹ سمیت کامران کامی پرعائد پابندی ختم کرنے کی سفارش کردی، راولپنڈی ڈسٹرکٹ ہاکی ایسوسی ایشن کی جانب سے 3سالہ پابندی ڈسپلن کی خلاف ورزی اور گراؤنڈ میں دوران میچ گالی گلوچ اور جھگڑا کرنے وجہ سےعائد کی گئی تھی، پابندی پر انصاف کی التجاء، تحریری درخواست پر صدر ڈی ایچ اے کا صوابدیدی حکم جاری،
تفصیلالت کے مطابق ڈسٹرکٹ ہاکی ایسوسی ایشن راولپنڈی کے صدر سعید خان نے ایمپائروقاص بٹ،والد جمیل بٹ،بھائی وقار بٹ سمیت کامران کامی کی جانب سے دی گئی تحریری درخواست اور انصاف کی التجاء پر نظرثانی کرتے ہوئے اپنے صوابدیدی حق کو استعمال کرتے ہوئے پابندی ختم کرنے کی سفارش کردی. اس سلسلہ میں ڈسٹرکٹ سپورٹس آفیسر راولپنڈی کو سفارش مرتب کرتے ہوئے ڈسٹرکٹ ہاکی اسیوسی ایشن راولپنڈی کی جانب سے عائد کردہ پابندی کو ختم کرنے کا صوابدیدی حکم بھی جاری کردیا. ڈی ایچ اے راولپنڈی کی جانب سے ستمبر2018 میں مذکورہ کھلاڑیوں اور آفیشل کے خلاف تین سالہ پابندی کا فیصلہ ڈسٹرکٹ ہاکی ایسوسی ایشن راولپنڈی کے منعقدہ اجلاس میں کیا گیا تھا جس میں درخواست دہندہ احسان الحق بابر کی درخواست پر انکوائری آفیسر غلام عباس گوگا کی تفصیلی انکوائری رپورٹ پیش کی گئی تھی جسکی روشنی میں پاکستان واپڈا سے تعلق رکھنے والے ایمپائر وقاص نٹ سمیت انکے بھائی وقار بٹ اور انکے والد محمد جمیل بٹ سمیت ایک کھلاڑی محمد کامران کامی پر تین سال کی پابندی عائد کردی گئی تھی. اس کے جواب میں محمد جمیل بٹ اور دیگر پابندی کے شکار کھلاڑیوں اور آفیشلز نے ماضی میں موقف اختیار کیا تھا کہ پابندی خلاف آئین و ضابطہ لگائی گئی، فیصلہ کے خلاف پی ایچ ایف سمیت عدالت سے رجوع کریں گے، یکطرفہ کارروائی کی گئی، گندی سیاست کا حصہ نہیں بننا چاہتے.
یہاں یہ امر بھی قابل ذکر ہے کہ ڈسٹرکٹ ہاکی ایسوسی ایشن روالپنڈی کے مذکورہ اجلاس میں صدرڈی ایچ اے سعید خان کی شمولیت کے بغیر ہی پابندی کا فیصلہ لیا گیا تھا جسکے بارے میں پنجاب اور پی ایچ ایف کو بھی مطلع کیا گیا تھا لیکن اس کے باوجود مذکورہ کھلاڑی پنجاب اور پی ایچ ایف کے ایونٹس کھلاتے رہے.جس سے ڈی ایچ اے راولپنڈی کے عہدیداران خاصے نالاں نظر آئے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں